Best Urdu Quotesmotivational urdu storiesUncategorized

Hum asy kiyoun hain || hum achy hain ya bury.

motivational life changing urdu story

Hum asy kiyoun hain

ایک بیج کو درخت بننے میں وقت تو لگتا ہے

ایک بیج کو درخت بننے میں ایک عرصہ تو لگتا ہے اسی طرح سے
ایک انسان اپناکردارخود بناتا ہے کوئی بھی شخص ایک دم سے بُرا ایک دم سے اچھا نہیں ہوتا
اُسے اپنا کردار بنانے میں ایسے ہی وقت لگتا ہے جیسے ایک بیج کو درخت بننے میں

ہم اچھے ہیں یا بُرے

ہم اچھے ہیں یا بُرے ہم خود ایسے کیوں ہیں کیا ہم نے خود کو ایسے بنایا ہے
نہیں ہمیں جیسا ماحول ملا ہم ویسے ہی بن گئے جیسے کہ ہم نے اکثر اپنے ارد گرد ایسے لوگ دیکھے ہوں گے
جو زیادہ پڑھے لکھے نہیں ہوتے مگر اُن کا رہن سہن کھانا پینا اُٹھنا بیٹھا ایسا ہوتا کہ وہ پڑھے لکھوں کو بھی پیچھے چھوڑ دیتے ہیں
اور کچھ لوگ ایسے بھی دیکھے ہوں گے جو بہت زیادہ تعلیم یافتہ ہوتے ہیں مگر اُن کا اُٹھنا بیٹھنا کھانا پینا بات کرنے کا اندا زسب گواروں سے جیسا ہوتا ہے
کیوں؟ کیونکہ یہ سب ماحول کی وجہ سے ہے
پڑھے لکھے لوگوں کے ساتھ رہ کر ایک ان پڑھ بھی پڑھے لکھے لوگوں جیسا برتاؤ کرتا ہے اور
ان پڑھ گوار اور جاہل لوگوں کے ساتھ رہ کر بھی ایک پڑھا لکھا ان جیسا ہی بن جاتا ہے

خود کو بدلنا ہے تو اپنا ماحول بدلو

ایک بادشاہ اپنے بیٹی کے ساتھ صبح سویرے سیر کیلئے ندی کے کنارے ٹہل رہا ہوتا ہے اور باپ بیٹی ٹہلتے ٹہلتے دور نکل جاتے ہیں
اور وہاں پر ایک عجیب منظر دیکھتے ہیں کہ بھیڑیں چرانے والا جہاں سے بھیڑیں پانی پی رہی ہوتی ہیں وہیں سے خود بھی وہ میلا پانی پی رہا ہوتا ہے
بیٹی کہتے ہے ابا جان کیا اسے اتنا بھی نہیں پتا کہ یہ گندہ پانی ہے پینے کے قابل نہیں ہے پھر بھی وہ پی رہا ہے ایسا کیوں
تو باپ نے کہا بیٹی یہ سب ماحول کا اثر ہے بیٹی نہیں مانی نہیں بابا کوئی اور وجہ ہے خیر بادشاہ نے کہابیٹی ہم اس کا ماحول اگر بدل دیں تو اس کا زندگی گزارنے کا انداز بھی بدل جائے گا
بادشاہ اُسے شخص کو اپنے گھر لے گیا اُسے اپنے محل میں رکھا اپنے ساتھ کھانا کھلایا اپنے طرح جینے کا سارا ماحول دیا
کچھ عرصے بعد اُس شخص کا زندگی گزارنے کا انداز بدل گیا ایک دن صبح کو ناشتے کی ٹیبل پر بادشاہ نے چپکے سے اُس کے گلاس میں مٹی کا ایک چھوٹا سا ڈھیلا ڈال دیا جس سے پانی گدھلا ہو گیا
؎اُس شخص نے جب یہ پانی دیکھا تو گلاس ایک سائیڈ پر رکھ دیا اور کہا میں اتنا گندا پانی نہیں پیوں گا تب بادشاہ نے بیٹی سے کہا بیٹی دیکھو یہ وہی شخص ہے
جو بھیڑوں کے ساتھ پانی پی رہا تھا اور آج اس کا ماحول بدلا تو اس کی زندگی بدل ہی بدل گئی۔

Tags

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close