aqwal e zareen

Khuda ki Naimatain

Khuda ki Naimatain

Khuda ki Naimatain

مجھے لہجے سمجھ میں آتے ہیں
اپنے الفاظ کو اب تر تیب نہ دے

Khuda ki Naimatain

مطلبی زمانہ ہے،نفرتوں کا قہر ہے،
یہ دنیا دکھاتی تو شہد ہے،مگر
پلاتی زہر ہے

love quotes

محبت چاہے کتنی سچی اور گہری کیوں نہ ہو
اگر بزدل شخص سے ہوجائے
 تو ادھوری ہی رہتی ہے

دشمن گھر میں آجائے یا دوست گھر سے چلا جائے
دونوں حالتوں میں مصیبت ہے

خزاں کے گرتے پتوں کو حقیر مت
سمجھنا کیوں کہ ان ہی پتوں کے
گرنے سے بہار آتی ہے

ہتھیاروں سے جنگ تو جیتی جا سکتی ہے
مگر دل نہیں،دل تو کردار سے جیتے جاتے ہیں

کس کس کو راضی کرو گے؟
بس ایک رب کو راضی کر لو
سارے مسئلے حل ہو جا ئیں گے

بات  تلخ  مگر
روح میں   حیا نہ ہو تو رنگ برنگے حجا ب بھی کام    نہیں دیتے

Khuda ki Naimatain

آپ اپنی اچھائیوں پر دھیان دیں
میں اپنی برائیوں کا حسا ب دے دو گی

Khuda ki Naimatain

میرا دل چاہتا ہے کہ ایک لڑکی کا دل اتنا پو شیدہ ہو
کہ مرد کو اس تک پہنچنے کے لیے خدا تک جانا پڑے

Khuda ki Naimatain

یہ جو لوگ ساتھ بیٹھ کے ہنستے ہیں
و ہی سا نپ کی طرح ڈستے ہیں

بات سیرت کی ہے،اثر کی ہے،
دکھاوے کی نہیں،
دکھنے میں تو تیزاب بھی پانی جیسا ہے

ہم تخفے میں ایک دوسرے کو گھڑیاں تو دیتے ہیں
مگر وقت نہیں دے پاتے

مشکل تو یہ ہے کہ ہمیں پیٹھ پیچھے  بولنے
والے با اخلاق اور منہ پر بولنے والا بد تمیز لگتا ہے

سا رے فرشتے ہی ملے ہمیں تو
کوئی غلطی کرتا ہی نہیں
ہمیشہ ہم ہی غلط ہوتے ہیں

Related Articles

Check Also
Close
Back to top button